ترقی پسندی اور مارکسی شرائط

ترقی پسندی اور مارکسی شرائط
ترقی پسندی اور مارکسی شرائط

صبغت وائین

1۔ ترقی پسندی کا مفہوم اور اس کا اصلی معنی دیکھیں، تو یہ رجعت پرستی کے متضاد لفظ کی صورت سمجھا جاتا ہے۔


2۔ رجعت پرستی اور ترقی پسندی دونوں عام طور پر موجود چلتی دنیا اور اس کے نظام، یعنی عالمی سماجی معیشتی نظام سے غیرمطمئن ہونے کے اظہار ہیں۔


3۔ رجعت پرستی یا رجعت پسندی میں نظام کو تبدیل کر کے کسی پرانے نظام کے احیا کی، یا اس کو واپس لانے کی کوشش کی جاتی ہے۔


4۔ ترقی پسندی میں نظام کو تبدیل کر کے کسی نئے نظام کو لانے کی کوشش کی جاتی ہے۔


5۔ ان دو صورتوں کے علاوہ ایک تیسری صورت حال بھی ممکن ہے۔ وہ یہ کہ موجود نظام کو قائم و دائم رکھنے کی کوشش کرنا۔ خواہ ایسا کرنے کے لیے مسلسل مراجعت کرنی پڑے، ترامیم و اصلاحات کرنی پڑیں، لیکن بنیادی خواہش موجود نظام یا ‘سٹیٹس کو’ کو قائم رکھنا ہی ہو۔


6۔ اب موجود نظام کے ساتھ چمٹ کے رہنا اور اس کو آگے نہ جانے دینا کچھ بھی ہو، مارکسزم/سوشلزم/کمیونزم (آج یہ تینوں ہم معنی ہیں) تو ہرگز نہیں ہے۔ مارکسزم تو اس نظام کو الٹ کر انقلاب کے ذریعے سوشلزم کی، اور پھر اس میں بھی مسلسل جدوجہد سے کمیونزم کی اور اس کے بعد ان لوگوں کے دیکھنے کی بات کرتا ہے، کہ انسان کے لیے مزید بہتر کیا ہے۔


7۔ تو اس طرح اگر تو اس اصطلاح کا اصل مفہوم دیکھا جائے، جہاں سے یہ آئی ہے، دیکھا جائے تو لیفٹ اور ترقی پسندی سرمایہ داری کے خاتمے اور سوشلسٹ نظام کے انقلاب کے ذریعے قیام کے ساتھ نتھی ہے۔


8۔ البتہ اگر ہم موجود ترقی پسندوں “کو دیکھ کر” “ترقی پسندی” کو ڈیفائن کرنا چاہیں، تو ان کی اکثریت کا مارکسزم کے ساتھ دور کا تعلق بھی نہیں ہے۔
۔
لیکن کیا اس “ترقی پسندی” کو ہم محض نام کی وجہ سے #ترقی پسندی مان لیں؟

Share This Post
Written by مدیر
لفظ نامہ ڈاٹ کام کی اداریہ ٹیم کے مدیران کی جانب سے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

You may use these HTML tags and attributes: <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>